کراچی: دماغ کو کھا جانے والا جرثومہ ایک بار پھر حملہ آور

کراچی میں دماغ کھاجانے والا جرثومہ نگلیریا کی علامات پھر سے ظاہر ہونے لگیں، گلبرگ اور کے ڈی اے اسکیم کے پانی سے نمونے حاصل کرنے کے بعد ٹیسٹ کے نتائج میں جرثومہ نگلیریا پایا گیا ہے۔

گزشتہ دنوں انہی علاقوں کے دو افراد کا انتقال ہوا جن کے انتقال کی وجہ نگلیریا بتائی گئی ہے۔
لیبارٹری میں ان علاقوں کے پانی کے نمونوں کے نتائج میں آنتوں کی سوزش، جلدی امراض اور آنکھوں کی سوزش کے جراثیم بھی پائے گئے ۔
نگلیریا کنٹرول کمیٹی کے مطابق گلبرگ اور کے ڈی اے اسکیم کے پانی میں کلورین نہ ہونے کے برابر ہے اور سیوریج کا پانی بھی شامل ہے، ان علاقوں کے پانی کو پینے کے استعمال نہیں کرنا چاہیے۔

پینے کے پانی کے ٹینکوں میں کلورین ڈالی جائے اور کراچی باسیوں کو چاہیے کے پانی ابال کر استعمال کریں ۔

Leave a Reply